Home URDU Noor Mukadam murder: SC seeks evidence against accused’s mother

Noor Mukadam murder: SC seeks evidence against accused’s mother

0
0


اسلام آباد: سپریم کورٹ نے پیر کے روز ایک ہائی پروفائل نور مقدم قتل کیس میں ملزم ظفر جعفر کے والدین کی ضمانت کی درخواستوں پر سماعت کی۔

جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں جسٹس منصور علی شاہ اور جسٹس قاضی امین پر مشتمل عدالت عظمیٰ کے بینچ نے سماعت کی جس میں ایڈووکیٹ خواجہ حارث ، درخواست گزار ذاکر جعفر اور عصمت آدم جی کے وکیل نے عدالت کے سامنے پیش ہوئے۔

جسٹس شاہ نے اسلام آباد ہائیکورٹ (آئی ایچ سی) کے 29 ستمبر کے فیصلے میں مرکزی ملزم کی والدہ کے ذکر سے استفسار کیا جس نے ان کی ضمانت کی درخواستیں مسترد کردیں۔

جسٹس بندیال نے ریمارکس دیئے کہ آئی ایچ سی کے فیصلے میں عصمت کا کوئی ذکر نہیں ہے۔

حارث نے بتایا کہ ظاہر جعفر پر نور مقدم کو قتل کرنے کے الزام میں مقدمہ درج کیا گیا تھا کیونکہ اس کے والدین واقعے کے وقت کراچی میں تھے۔ جسٹس بندیال نے کہا کہ ہم صرف کیس کو سمجھنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

جسٹس نور امین نے متاثرہ خاندان کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ’’ نور مکادم قتل ایک انتہائی بدقسمت واقعہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم معلومات حاصل کر رہے ہیں لہذا کیس سے متعلق حقائق کو جانیں۔

یہ بھی پڑھیں: آئی ایچ سی نے نورمقدم کیس میں ظاہر جعفر کے والدین کی درخواست ضمانت مسترد کردی

عدالت عظمیٰ نے استغاثہ کو ہدایت کی کہ اس معاملے میں عصمت کے مبینہ ملوث ہونے کی حد تک ثبوت پیش کریں۔

وکیل نے کہا کہ دو ماہ میں ٹرائل مکمل کرنے کے لیے ہائی کورٹ کی ہدایات ان کے منصفانہ ٹرائل کے حق کو متاثر کرے گی۔ اس پر جسٹس بندیال نے کہا کہ منصفانہ مقدمے کا حق لازمی ہے لیکن مقدمے کے اختتام میں تاخیر پریشانی کا باعث ہے۔

سماعت 18 اکتوبر تک ملتوی کر دی گئی۔

.fb-background-color {background: #ffffff! اہم؛ } .fb_iframe_widget_fluid_desktop iframe {width: 100٪! اہم؛ }

پوسٹ۔ نور مقدم قتل: سپریم کورٹ نے ملزم کی والدہ کے خلاف ثبوت مانگے سب سے پہلے شائع ہوا اے آر وائی نیوزجنرل چیٹ چیٹ لاؤنج۔



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here